تبوک میں قیام

قاضی محمد سلیمان سلمان منصور پوری
تبوک پہنچ کر نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک ماہ قیام فرمایا۔ اہلِ شام پر اس حرکت کا اثر یہ ہوا کہ انہوں نے عرب پر حملہ آور ہونے کا خیال اُس وقت چھوڑ دیا اور اس حملہ آوری کا بہترین موقع آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کی وفات کے بعد کا زمانہ قرار دیا۔ تبوک میں ایک نمازکے بعد آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے ایک مختصر اور نہایت جامع وعظ فرمایا تھا۔ ذیل میں اس کا ترجمہ درج کیا جاتا ہے۔ ہم نے اس میں صرف اس قدر تصرف کیا ہے کہ ہر فقرے پر نمبر شمار لگا دیے ہیں۔
حمد و ثنا کے بعد فرمایا:
1۔ ہر ایک کلام سے صدق میں بڑھ کر اللہ کی کتاب ہے۔
2۔ سب سے بڑھ کر بھروسے کی بات تقویٰ کا کلمہ ہے۔
3۔ سب ملّتوں سے بہتر ملّت ابراہیم علیہ السلام کی ہے۔
4۔ سب طریقوں سے بہتر طریقہ محمد (صلی اللہ علیہ وسلم) کا ہے۔
5۔ سب باتوں پر اللہ کے ذکر کو شرف ہے۔
6۔ سب بیانات سے پاکیزہ تر یہ قرآن ہے۔
7۔ بہترین کام اولوالعزمی کے کام ہیں۔
8۔ امور میں بدترین امر وہ ہے جو نیا نکالا گیا ہو۔
9۔ انبیا کی روش سب روشوں سے خوب تر ہے۔
10۔ شہیدوں کی موت، موت کی سب قسموں سے بزرگ تر ہے۔
11۔ سب سے بڑھ کر اندھا پن وہ گمراہی ہے جو ہدایت کے بعد ہوجائے۔
12۔ عملوں میں وہ عمل اچھا ہے جو نفع دہ ہو۔
13۔ بہترین روش وہ ہے جس پر لوگ چل سکیں۔
14۔ بدترین کوری دل کی کوری ہے۔
15۔ بلند ہاتھ پست ہاتھ سے بہتر ہوتا ہے۔
16۔ تھوڑا اور کافی مال اس بہتات سے اچھا ہے جو غفلت میں ڈال دے۔
17۔ بدترین معذرت (توبہ) وہ ہے جو جان کنی کے وقت کی جائے۔
18۔ بدترین ندامت وہ ہے جو قیامت کو ہوگی۔
19۔ بعض لوگ جمعہ کو آتے ہیں مگر دل پیچھے لگے ہوتے ہیں۔
20۔ ان میں بعض لوگ وہ ہیں جو اللہ کا ذکر کبھی کبھی کیا کرتے ہیں۔
21۔ سب گناہوں سے عظیم تر جھوٹی زبان ہے۔
22۔ سب سے بڑی تونگری دل کی تونگری ہے۔
23۔ سب سے عمدہ توشہ تقویٰ ہے۔
24۔ دانائی کا سر یہ ہے کہ خدا کا خوف دل میں ہو۔
25۔ دل نشین ہونے کے لیے بہترین چیز یقین ہے۔
26۔ شک پیدا کرنا کفر (کی شاخ) ہے۔
27۔ بین سے رونا جاہلیت کا کام ہے۔
28۔ چوری کرنا عذابِ جہنم کا سامان ہے۔
29۔ بدمست ہونا آگ میں پڑنا ہے۔
30۔ شعر ابلیس کا (حصہ) ہے۔
31۔ شراب تمام گناہوں کا مجموعہ ہے۔
32۔ بدترین روزی یتیم کا مال کھا جانا ہے۔
33۔ سعادت مند وہ ہے جو دوسرے سے نصیحت پکڑتا ہے۔
34۔ اصل بدبخت وہ ہے جو ماں کے پیٹ ہی میں بدبخت ہو۔
35۔ عمل کا سرمایہ اس کا بہترین انجام ہے۔
36۔ بدترین خواب وہ ہے جو جھوٹا ہو۔
37۔ جو بات ہونے والی ہے وہ بہت قریب ہے۔
38۔ مومن کو گالی دینا فسق ہے۔
39۔ مومن کو قتل کرنا کفر ہے۔
40۔ مومن کا گوشت کھانا (اس کی غیبت کرنا) اللہ کی معصیت ہے۔
41۔ مومن کا مال دوسرے پر ایسا ہی حرام ہے جیسا کہ اس کی اپنی جان۔
42۔ جو خدا سے استغنا کرتا ہے، خدا اسے جھٹلاتا ہے۔
43۔ جو کسی کا عیب چھپاتا ہے خدا اس کے عیب چھپاتا ہے۔
44۔ جو معافی دیتا ہے، اسے معافی دی جاتی ہے۔
45۔ جو غصے کو پی جاتا ہے، خدا اسے اجر دیتا ہے۔
46۔ جو نقصان پر صبر کرتا ہے، خدا اسے اجر دیتا ہے۔
47۔ جو چغلی کو پھیلاتا ہے، خدا اس کی رسوائی عام کردیتا ہے۔
48۔ جو صبر کرتا ہے، خدا اسے بڑھاتا ہے۔
49۔ جو خدا کی نافرمانی کرتا ہے خدا اسے عذاب دیتا ہے۔
50۔ پھر تین دفعہ استغفار پڑھ کر (آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے اس خطبہ کو ختم فرمایا)۔

حصہ