زبان زد اشعار

Print Friendly, PDF & Email

ترے آزاد بندوں کی نہ یہ دنیا نہ وہ دنیا
یہاں مرنے کی پابندی، وہاں جینے کی پابندی
(علامہ اقبال)
……٭٭٭……
ترے نطق کی جب چلیں آندھیاں
سماعت کے خیمے اکھڑ جائیں گے
(شورعلیگ)
……٭٭٭……
تیز رکھیو سرِ پُرخار کو اے دشتِ جنوں
شاید آ جائے کوئی آبلہ پا میرے بعد
(مرزا محمد تقی ہوسؔ)
……٭٭٭……
تصویرِ زندگی کا عجب آب و رنگ تھا
دیکھا تو پھول، ہاتھ لگایا تو سنگ تھا
(شہزاد احمد)
……٭٭٭……
تعلق کتنا گہرا، ربط کتنا خوبصورت ہے
لبوں پر مسکراہٹ اور سینوں میں کدورت ہے
(ڈاکٹر انعام الحق جاوید)

Share this: