Friday magazine

امان اللہ شادیزئی

39 مراسلات 0 تبصرے

شہنشاہ ظہیرالدین بابر کا ہندوستان کے بارے میں دلچسپ تبصرہ

شہنشاہ بابر 6 محرم 888ھ، مطابق 1483ء کو پیدا ہوا، اور اس کی وفات 1530ء میں ہوئی۔ 11 سال کی عمر میں باپ کی...

حیرت سے دیکھتا ہی رہ گیا جب سالار نے قتل کرنے...

گزشتہ سے پیوستہ جیل کے دن تو خوش گوار ہوسکتے ہیں لیکن راتیں دلکش نہیں ہوتیں۔ گزرے ہوئے لمحات یاد آتے ہیں اور ذہن اکثر...

پشین کلاشنکوفوں کی فائرنگ سے گونج رہا تھا

(گزشتہ سے پیوستہ) جون کے بعد جولائی کا مہینہ بھی گزر رہا تھا اور ابھی تک میرے احاطے میں کوئی بھی سیاسی قیدی نہیں آیا...

پھانسی گھاٹ پر حیرت انگیز منظر نگاہوں کے سامنے تھا

میری قید بھی مختلف مرحلوںسے گزر رہی تھی۔ جب کوئی نیا سیاسی قیدی آتا تو تنہائی کم ہوجاتی، اور جب کوئی غمگسار نہ ہوتا...

اسلحہ کے تاجر غلام محمد ڈوسل کی کہانی

گزشتہ سےپیوستہ اب نئے قیدی کی وجہ سے میری قیدِ تنہائی ختم ہوگئی۔ میرے احاطے کا نیا قیدی کوئی عام آدمی نہ تھا، بلکہ پاکستان...

دوست محمد “دی تاجار سم؟”

آج اسکول کے زمانے کی کچھ یادیں قلم بند کرنا چاہتا ہوں۔ یہ دور بھی ایک خوبصورت خواب کی مانند ہے۔ اب تو گزرے...

مچھ جیل سے کوئٹہ جیل کا سفر؟

مچھ جیل سے کوئٹہ میں دوبارہ آنا میرے لیے مفید ثابت ہوا۔ یہاں نیپ کے اکثر قائدین سے ملاقات کا موقع ملا اور مجھے...

مچھ جیل سے کوئٹہ جیل کا سفر؟

جیل میں کارروائی کے بعد حالات پُرسکون ہوگئے تھے۔ آدم خان نے بتلا دیا تھا کہ ونگ لیڈر لکھمیر مارا گیا۔ لکھمیر کی کہانی...

مچھ جیل میں قیدیوں کی بغاوت

بھٹو دور کی تاریخ کا ایک سفاکانہ باب گزشتہ سے پیوستہ جیل کے اندر قیدیوں کی اپنی علیحدہ داستانیں ہیں۔ وہ اُن تمام جرائم کا اعتراف اپنے...

ایک سیاسی کارکن کی یادداشتیں

اس جرگے نے خان عبدالصمد خان کو 14 سال قید کی سزا سنائی، اور وہ فروری یا مارچ 1969ء میں اُس وقت رہا ہوئے...
پرنٹ ورژن
Friday magazine