انکل سام کا اصلی چہرہ دیکھنے والو دیکھو!

Print Friendly, PDF & Email

مشکل میں جو کام نہ آئے، وہ ہے امریکہ
خود مارے اور شور مچائے، وہ ہے امریکہ
ظلم کرے، احسان جتائے، وہ ہے امریکہ
جوتے کھاکر شان دکھائے، وہ ہے امریکہ
کبھی نہ جیتے، مار ہی کھائے، وہ ہے امریکہ
جنگ کے جو شعلے بھڑکائے، وہ ہے امریکہ
ہیروشیماؔ، ناگاساکیؔ دیتے ہیں یہ گواہی
انسانوں کا جانی دشمن ایک ہے وہ ہرجائی
بے بس انسانوں کو جس نے موت کی نیند سلائی
دنیا بھر کے انساں اب تک دیتے ہیں یہ دہائی
شہر کو قبرستان بنائے، وہ ہے امریکہ
جنگ کے جو شعلے بھڑکائے، وہ ہے امریکہ
ویتؔ نام، فلپائنؔ، لائوسؔ، سب کا ہے یہ قاتل
جس نے اس کا ساتھ دیا وہ آپ ہوا ہے گھائل
جس نے اس کی جنگ لڑی ہے وہ بھی اس کا بسمل
ہر ہر انگ ہے جھوٹا جس کا، خود ہے مجسم باطل
جھوٹ بول کے سچ جھٹلائے وہ ہے امریکہ
جنگ کے جو شعلے بھڑکائے، وہ ہے امریکہ
کابلؔ اور بغدادؔ کی کس نے اینٹ سے اینٹ بجائی
جھوٹے الزاموں کے کارن ایک قیامت ڈھائی
نیٹو اور امریکی فوج نے آگ جہاں برسائی
برسوں سے افغانوں پر ہے ظلم کی بدلی چھائی
ملکوں ملکوں آگ لگائے وہ ہے امریکہ
جنگ کے جو شعلے بھڑکائے، وہ ہے امریکہ
ٹرمپؔ کی صورت سب پہ عیاں ہے امریکی کردار
دنیا بھر کے لوگ تو ہیں ہی، خود امریکی بیزار
مسلم اور اسلام پہ اس کے ہر دم اوچھے وار
جو نتنؔ یاہو اور نریندرؔ مودی کا ہے پکا یار
القدس میں صہیونی جو بسائے، وہ ہے امریکہ
جنگ کے جو شعلے بھڑکائے، وہ ہے امریکہ

Share this: