زبان زد اشعار

Print Friendly, PDF & Email

روز آپس میں لڑا کرتے ہیں اربابِ خرد
کوئی دیوانہ الجھتا نہیں دیوانے سے
(انور صابری)
……٭٭٭……
ریل کی سیٹی میں کیسے ہجر کی تمہید تھی
اس کو رخصت کرکے گھر لوٹے تو اندازہ ہوا
(پروین شاکر)
……٭٭٭……
راستی سیدھی سڑک ہے جس میں کچھ کھٹکا نہیں
کوئی رہرو آج تک اس راہ سے بھٹکا نہیں
(اسماعیل میرٹھی)
……٭٭٭……
رنگوں کے اہتمام میں صورت بگڑ گئی
لفظوں کی دھن میں ہاتھ سے معنی نکل گئے
(کمار پاشی)

Share this: