Friday magazine

ابو نثر

53 مراسلات 0 تبصرے

رسوم و قیود کا نشئی

ادبی محفل سجی ہوئی تھی۔ یکایک اُردو کے ایک گراں قدراور’گزیٹڈ‘ استاد اُٹھے اور گرج گرج کر اقبالؔ کی نظم ’شکوہ‘ سنانے لگے۔ ابھی...

خود بدلتے نہیں

کہنے والے کہا کیے کہ لکھنے والو پڑھا کرو۔ پَر لکھنے والے لکھا کیے اور لکھتے لکھتے ہنسا کیے کہ ’’پڑھنے کی ایسی تیسی‘‘۔...

ایک منظر ہے مگر بے ربط پس منظر میں ہے

ناک میں دم ہوگیا لفظِ دَم کے معانی دیکھ کر۔ بندہ دَم بخود ہے کہ اِس دو حرفی لفظ میں آخر کتنا دم ہے...

جس مال کے تاجر تھے وہی مال ندارد

میاں چنوں سے میاں امجد محمود چشتی نے سوال اُٹھایا ہے: ’’ایک لفظ ہے’مَغوی‘۔ ہم تو پیدا ہوتے ہی سننے لگے تھے کہ یہ لفظ...

ابلاغیات کا جہنم

پتا چلا کہ پچھلا کالم پڑھ کر ایک بہت بڑے دانشور بہت تڑپے۔ تڑپ کر انھوں نے ایک ’بن دانش‘ بات بن سوچے لکھ...

مرزا غالبؔ کے اندر کفن کے پاؤں

پچھلے ہفتے ہم صاحبِ فراش رہے۔ ملک بھر میں اور بھی بہت سے لوگ یہی رہے، مگر اکثر لوگوں کو پتا ہی نہیں چلا...

سند نائب قاصدوں اور خاکروبوں کی

ایک بہت بڑے کالم نگار نے، جو شاعر بھی ہیں، ایک سوال داغا ہے۔ اس ’دغے ہوئے‘ سوال میں وہ پوچھتے ہیں: ’’ برخط بھی...

پیش رَو بن جائیے

بدلتے زمانے اور بدلتی زبان نے اب انھیں 'Beautician' بنا دیا ہے۔ ’’بیو-ٹی- شی- اَن‘‘۔ ورنہ حُسنِ بے پروا کی آرائش و زیبائش کرنے...

اپنی زبان سنبھالیے

برسوں پہلے ایک سلسلے وار پُرمزاح انگریزی نشریہ نظر سے گزرا کرتا تھا۔ عنوان تھا: "Mind your language" عنوان کی اُردو زبان میں بامحاورہ...

ہمیں علم نہیں، لہٰذا اُردو علمی زبان نہیں

تَہ میں اُتر کر دیکھیے تو اُردو کو تہی دامنی یا تنگ دامنی کا طعنہ دینے والے اکثر وہ ہیں جن کا اپنا دامن...
پرنٹ ورژن
Friday magazine
پرنٹ ورژن کراچی نمبر
Karachi Number