Friday magazine

سید تاثیر مصطفیٰ

109 مراسلات 0 تبصرے

رؤف طاہر کی یاد میں

جناب رئوف طاہر سے ابتدائی تعارف تو 1970ء کی دہائی میں ہی ہوگیا تھا، کہ وہ مقرر اور ڈیبیٹر کے طور پر تعلیمی حلقوں...

سینئر صحافی رؤف طاہر کی رحلت

پیر4جنوری کی صبح ایک نجی مصروفیت کے باعث میرا موبائل فون سائلنٹ پر تھا۔ اس دوران مولانا ظفر علی خان ٹرسٹ کے برادرم رستم...

مسلم لیگ (ن) کا قلعہ… لاہور

حکومت کے لیے چیلنج نہ بن سکا… حزب اختلاف کے سیاسی اتحاد پی ڈی ایم کا 13 دسمبر کا جلسہ جس سے اپوزیشن کی بے...

عبدالقادر حسنبااصول، معتبر صحافی

یہ نوازشریف کا بطور وزیراعظم پہلا دورِ حکومت تھا۔ پنجاب میں غلام حیدر وائیں وزیراعلیٰ اور میاں اظہر گورنر تھے۔ نوازشریف نے اسٹیبلشمنٹ کی...

مولانا ظفر علی خاندنیائے صحافت میں عظمت ِ اسلاف کی یادگار

دنیائے صحافت میں جن عظیم شخصیات کا تذکرہ ملتا ہے اُن میں مولانا ظفر علی خاں کی شخصیت عظمت ِ اسلاف کی یادگار ہے۔...

ملک کا بدلتا سیاسی منظرنامہ

پی ٹی ایم اور حکومت دونوں اسٹیبلشمنٹ کو اپنی جانب متوجہ کرنے میں مصروف ملک کا سیاسی منظرنامہ ایک بار پھر بدلتا ہوا محسوس ہورہا...

سید سعود ساحر

جرات مند صحافت کے ایک باب کا خاتمہ راولپنڈی اسلام آباد میں روزنامہ جسارت اور ہفت روزہ فرائیڈے اسپیشل کے طویل عرصے تک بیوروچیف رہنے...

۔’’استعفوں کی ‘‘دھمکی غیر موثر ”حکمت عملی“۔

زیرک سیاست دان اور جمعیت العلمائے اسلام (ف) کے مرکزی ترجمان حافظ حسین احمد عرصے بعد سیاسی منظر پر نظر آئے ہیں۔ وہ ہماری...

۔”اخلاقی طاقت“ بہ مقابلہ” بندوق کی طاقت“۔

کیا اس ملک کے سیاست دان اپنی اس طاقت کو جانتے ہیں؟ اور اس اخلاقی قوت کے لیے اپنے عمل سے کوئی مثال بھی...

میاں نواز شریف اور مسلم لیگ (ن)۔

’’مزاحمت‘‘ کے پردے میں ’’مفاہمت‘‘ کی سیاست عسکری قیادت سے رابطہ نہ کرنے کا اعلان، عمل ہوگا؟ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے عملی سربراہ اور عدالتی...
پرنٹ ورژن
Friday magazine